پاکستان میں ہفتے اور اتوار کو کاروبار بند رکھنے کا حکم کالعدم قرار – رویت ہلال ریسرچ کونسل نے عید الفطر25 مئی کو ہونے کی پیشگوئی کردی – افغان خفیہ ایجنسی کے دفتر پر طالبان کے حملے میں 7 اہلکار ہلاک اور 40 زخمی – عالمی بینک اور وزارت اقتصادی امور کے مابین دو منصوبوں کے لیے 37 کروڑ 10 لاکھ ڈالر کے معاہدے پر دستخط ہوگئے – عالمی ادارہ صحت کا کورونا سے نمٹنے کی قومی اور عالمی تیاریوں کا جائزہ لینے کیلئے آزادانہ تحقیقات کرانے کا عزم

اسلام آباد: ایشیائی ترقیاتی بینک(اے ڈی بی) نے پاکستان کے لئے 30 کروڑ ڈالر کا ہنگامی قرض فراہم کرنے کی منظوری دے دی ہے۔اس حوالے سے ایشیائی ترقیاتی بینک کی طرف سے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق کورونا وائرس کی وبا سے متاثرہ افراد کے علاج اور غریبوں کی مدد کے لئے ایشیائی ترقیاتی بینک نے پاکستان کے لئے ایمرجنسی امدادی قرض کا بندوبست کیا ہےجس کے تحت پاکستان کو 30 کروڑ ڈالر کی رقم فراہم کی جائے گی۔

اعلامیے کے مطابق  یہ رقم ادویات اور طبی آلات کی خریداری، ہسپتالوں اور ڈاکٹرز پر خرچ کی جائے گی۔ اس کے علاوہ احساس پروگرام کے تحت کورونا وائرس سے متاثر ہونے والے غریب خاندانوں کی مالی معاونت بھی کی جائے گی۔

ایشیائی ترقیاتی بینک کی نائب صدر کے مطابق کورونا کی وبا سے معاشی اور صحت کےمسائل بڑھ گئے ہیں جن سے نمٹنے کے لیے بینک پاکستان کی مدد جاری رکھے گا۔

لاہور /  راولپنڈی: پنجاب حکومت اور ٹرانسپورٹرز کے درمیان پبلک ٹرانسپورٹ کھولنے کا معاملہ پھر التواءکا شکار ہوگیا اور ٹرانسپورٹرز نے حکومتی ایس او پیز پر ٹرانسپورٹ چلانے سے انکار کردیا جس کے باعث پنجاب میں کل  بھی پبلک ٹرانسپورٹ نہیں چل پائے گی ۔

تفصیلات کے مطابق آل پاکستان پبلک ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن کے چئیرمین عصمت اللہ نیازی نے دیگر عہدیداروں کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کی جانب سے بتائے گئے ایس او پیز کچھ اور تھے اب نظر کچھ اور آرہے ہیں۔ ہماری مشاورت سے بنائے گئے ایس او پیز پر عمل درآمد نہیں کروایا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم نے کرایوں میں کمی منظور کرلی لیکن مسافروں کی تعدادمیں میں کمی قبول نہیں۔ 50 فی صد مسافروں کیساتھ بسیں نہیں چلاسکتے ۔اس لیے ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ پیر سے پنجاب بھر میں پبلک ٹرانسپورٹ نہیں چلے گی۔حکومت کے  ایس او پیز کے تحت گاڑیاں نہیں چلا سکتے۔

دوسری جانب صدر انصاف ٹرانسپورٹ ورکر فیڈریشن شکیل اشرف بٹ نے اتوار کی رات 12 سے تمام ٹرانسپورٹ فعال کرنے کا اعلان کردیا ہے جس کے بعد ٹرانسپورٹ چلانے کے معاملے میں پنجاب کے ٹرانسپورٹر دو دھڑوں میں تقسیم ہوگئے ہیں۔

شکیل اشرف نے پریس کانفرنس میں کہا کہک امید کرتے ہیں کہ وزیر اعلی پنجاب ہمیں مکمل تحفظ فراہم کریں گے۔ انصاف ٹرانسپورٹ ورکرز فیڈریشن کے رہنما مرزا شہزاد کا کہنا تھا کہ دو مہینوں سے ٹرانسپورٹ بند ہونے سے مالی مشکلات کا شکار ہوئے ہیں۔ حکومت نے جو ایس او پیز تیار کی ہیں وہ کافی آسان ہیں۔ ٹرانسپورٹ بھائیوں اور دیگر تنظیموں کی کاوشوں سے ٹرانسپورٹ کو کھول دیا گیا۔  گاڑیوں کو ڈس انفیکٹ کرنا، ہینڈ سینیٹائزر ماسک کا استعمال کرنا ہے۔

ان کا کہنا تھا حکومت سے امید رکھتے ہیں کہ ہمارے ٹیکسز اور ٹول میں ریلیف کا اعلان کیا جائے گا۔ اے سی اور نان اے سی بسوں کے کرایوں میں  اور 15 فیصد کمی کی جائے گی اور حکومتی احکامات کی تعمیل کی جائے گی۔

پبلک ٹرانسپورٹ کی بحالی کے  حتمی ایس او پیز اور کرایوں میں کمی کا نوٹیفکیشن ایکسپریس نیوز نے حاصل کرلیا ہے جس کے مطابق پنجاب حکومت نے ائیرکنڈیشننڈ پبلک ٹرانسپورٹ کے کرایوں میں 20 فی صدکمی کردی  ہے اور اسی طرح نان ائیرکنڈیشنڈ پبلک ٹرانسپورٹ کے کرائے 78 پیسے سے93 پیسہ فی کلو میٹر کم کردیے گئے ہیں۔

جاری کردہ ایس او پیز میں ہوا کے لیے بس یا ویگن کی کھڑکیاں کھلی رکھنے کی ہدایت دی گئی ہے۔سفر مکمل کرنے پر بس کو جراثیم کش ادویات سے دھویا جائے گا صوبے کے تمام بس ٹرمینلز پر ایس او پیز کو نمایاں جگہوں پر چسپاں کیا جائے گا۔ مسافروں کی ٹریکنگ یقینی بنانے کے لیے  الیکٹرانک ٹکیٹنگ جاری کرنا ہوں گے۔ بس ٹرمینلز پر اضافی اہلکار تعینات کرکے ہجوم نہیں لگنے دیا جائے گا۔ٹرمینل میں پارکنگ سائیٹس پر نشانات لگائے جائیں گے۔

ہدایت نامے میں مسافروں کے لیے ماسک اور گلوز پہننا لازمی قرار دیا گیا ہے۔ مسافروں اور بس عملہ کے درمیان سماجی فاصلہ یقینی بنانا ہوگا۔ ڈرائیور اور کنڈیکٹر کا ٹیمپریچر سفر شروع کرنے سے پہلے چیک کرنا لازمی قرار دیا گیا۔ 65 سالہ مسافر کے ساتھ والی سیٹ خالی رکھی جائے گا۔ کھانسی نزلہ زکام کے لیے ٹشو کا استعمال کیا جائےگا۔ بخار یا شدید کھانسی کی صورت میں مسافر کو گاڑی میں سوار نہیں ہونے دیا جائے گا۔راولپنڈی بس ٹرمینل اور بس یا ویگن میں ہیڈ سینیٹائزر موجود ہونا چاہیے۔ پبلک ٹرانسپورٹ میں بیٹھنے والے 3 فٹ کا فاصلہ رکھیں گے۔

دوسری جانب پاکستان گڈز ٹرانسپورٹرز نے ڈیزل کی قیمتوں میں کمی کے باعث کرایوں میں25 سے30 فی صد کمی کا اعلان کیا ہے اور ساتھ ہی حکومت سے مارکیٹ میں اشیاءکی قیمتوں میں بھی کمی کا مطالبہ کر دیا۔

جنرل سیکرٹری پاکستان گڈز ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن طارق نبیل کا کہنا ہے کہ ڈیزل کی قیمتوں میں کمی کی وجہ سے کرایوں میں 25 سے30 فیصد کمی کا فیصلہ کیا ہے۔حکومت کرایوں میں کمی کے پیش نظرمارکیٹوں میں اشیاءکی قیمتوں میں کمی کرائے،تاکہ عام عوام کو کرایوں میں کمی کا حقیقی فائدہ پہنچ سکے۔ڈیزل کی قیمتوں میں کمی کے باعث عوامی مفاد کے پیش نظر گڈز ٹرانسپورٹرز نے اپنے طور پر کرایوں میں 30 فیصد تک کمی کا اعلان کیا ہے۔

کراچی:  بلین مارکیٹ میں سونے کی فی اونس قیمت میں 30 ڈالر کمی ریکارڈ کی گئی جس کے مثبت اثرات پاکستان میں بھی نظر آئے۔بین الاقوامی مارکیٹ میں ٹریڈنگ کے دوران سونے کی قیمت تیس ڈالر فی اونس کمی کے بعد 1683 ڈالر پر پہنچ گئی، عالمی مارکیٹ میں نمایاں کمی کے بعد پاکستان میں سونے کی فی تولہ قیمت میں نمایاں کمی ریکارڈ کی گئی۔

آل پاکستان جیولرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین محمد ارشد کے مطابق سونے کی فی تولہ اور دس گرام قیمتوں میں بالترتیب 2 ہزار اور 1 ہزار 714 روپے کمی ہوئی۔حالیہ کمی کے بعد پاکستان میں سونے کی فی تولہ قیمت 94 ہزار 700 اور دس گرام قیمت 81 ہزار 189 روپے تک پہنچ گئی۔یاد رہے کہ لاک ڈاؤن کی وجہ سے پاکستان بھر کے صرافہ بازار بند ہیں اور اسی وجہ سے خریدوفروخت نہیں ہورہی ہے۔عالمی مارکیٹ میں گزشتہ دنوں سونا مہنگا ہونے کے باعث اس کے اثرات پاکستانی صرافہ بازار بھی پڑے تھے اور سونے کی قیمت ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔یہ بھی یاد رہے کہ سونے کے مقابلوں میں عالمی منڈی میں تیل کی قیمتیں کم ہوئی ہیں جس کے سبب ملک میں پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں نمایاںکمی کی گئی ہے۔

اسلام آباد: (لائلپورپوسٹ)  - وفاقی حکومت نے وفاقی دارالحکومت کی حدود میں قائم بڑے بڑے فارم ہاؤسز اور2کنال سے زائد اراضی پر محیط بنگلوں پر لگژری ٹیکس عائد کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے،7ہزار مربع فٹ پر محیط فارم ہاوسز سے سالانہ 1لاکھ 75ہزار جبکہ 4کنال سے زائد کے رہائشی بنگلے پر 1لاکھ لگژری ٹیکس عائد کرنے کی تجویز پیش کی گئی ہے،لگژری ٹیکس پہلے مرحلے میں وفاقی دارلحکومت کی حدود میں عائد کیا جائے گا اس سلسلے میں اسلام آباد انتظامیہ کی معاونت بھی حاصل ہوگی۔ 

وزارت خزانہ کے ذرائع کے مطابق حکومت کو اگلے مالی سال کے بجٹ میں بڑے بڑے فارم ہاؤسز اور بنگلوں پر لگژری ٹیکس عائد کرنے تجاویز دی گئی ہیں اس سلسلے میں دستیاب دستاویزات کے مطابق بڑے رہائشی بنگلوں کیلئے 2تجاویز زیر غور ہیں جس کے مطابق 2کنال سے لیکر 4کنال رقبے یعنی 6ہزار مربع فٹ کے حامل بنگلوں پر سالانہ 1لاکھ روپے لگژری ٹیکس لگانے کی تجویز ہے جبکہ 5کنال سے زائد اراضی پر محیط رہائشی بنگلوں پر 2لاکھ روپے لگژری ٹیکس لگانے کی تجویز زیر غور ہے-

اسی طرح بڑے بڑے ایگرو فارم ہاؤسز اور رہائشی فارم ہاؤسز پر بھی لگژری ٹیکس عائد کرنے کی تجاویز پیش کی گئی ہیں جس کے مطابق 5کنال سے لیکر 7ہزار مربع فٹ کے رقبے پر محیط فارم ہاؤسز پر 25روپے فی مربع فٹ کے حساب سے ٹیکس عائد کرنے کی تجویز زیر غور ہے جو سالانہ 1لاکھ 75ہزار روپے بنتے ہیں اسی طرح 7ہزار سے لیکر 10ہزار مربع فٹ رقبے پر محیط فارم ہاؤسز پر 40روپے فی مربع فٹ جبکہ 10ہزار مربع فٹ سے زائد کے فارم ہاؤسز پر 50روپے فی مربع فٹ کے حساب سے لگژری ٹیکس عائد کرنے کی تجویز زیر غور ہے-

اسی طرح ایک دوسری تجویز کے مطابق 5 ہزار سے لیکر 7 ہزار مربع فٹ پر قائم فارم ہاؤسز60روپے فی مربع فٹ کے حساب سے سالانہ لگژری ٹیکس عائد کرنے کی تجویز زیر غور ہے جبکہ 7ہزار ایک سے لیکر 10ہزار مربع فٹ کے رقبے پر محیط فارم ہاؤسز پر سالانہ 70روپے جبکہ 10ہزار مربع فٹ سے زائد رقبے پر محیط فارم ہاؤسز پر سالانہ 80روپے فی مربع فٹ ٹیکس عائد کرنے کی تجویز زیر غور ہے-

ذرائع کے مطابق لگژری ٹیکس عائد کرنے کے حوالے سے ایف بی آر،وزارت خزانہ اور آئی سی ٹی حکام کے مابین کئی میٹنگز کا انعقاد ہوچکا ہے اور منظوری کے بعد پہلے مرحلے میں لگژری ٹیکس وفاقی دارلحکومت میں قائم فارم ہاؤسز اور بڑے بڑے رہائشی بنگلوں پر عائد کیا جائے گا۔

کراچی: کراچی کے تاجروں کے وفد نے جامعہ بنوریہ عالمیہ کے رئیس وشیخ الحدیث مفتی محمد نعیم سے ملاقات کی، وفد میں کراچی تاجر اتحاد کے چیئرمین عتیق میر،جمیل پراچہ ، شیر جیل گوپلانی، چوہدری ایوب سمیت دیگر تاجر تنظیموں کے نمائندے شامل تھے۔

عتیق میر ودیگر تاجروں نے کہا کہ ہم پیر سے اپنا مکمل کاروبار کھول رہے ہیں، ملازمین بے روزگاری سے پریشان اور فاقہ کشی پر مجبور ہیں اگر مارکیٹیں اسی طرح بند رہی تو یہ حلال کمانے والا طبقہ بھی چوری ،ڈکیتیوں یا پھر خودکشیوں پر مجبور ہوگا، بہتر یہ ہے کہ ہم کاروبار کھولیں اور ایس او پیز پر عمل کریں۔

رئیس وشیخ الحدیث مفتی محمد نعیم نے کہا کہ کورونا کے لاک ڈاؤن کی وجہ سے پوری قوم مشکلات کا شکار ہے اس سے نکلنے کے لیے دعاؤں اور کثرت استغفار کی ضرورت ہے،وہی ذات ہمیں اس مشکل سے نکلنے میں مدد دے سکتی ہے،انھوں نے کہا کہ کرونا وبا ہے اس کا انکار ممکن نہیں ہے لیکن کیا کورونا کاعلاج کئی سال تک نہیں ملے گا تو لاک ڈاؤن بھی اتنا ہی طویل رکھا جائے گا۔

انھوں نے کہا کہ تاجر برداری کے ساتھ حکومت کو چاہیے کہ وہ تعاون کرے،کیونکہ تاجر معیشت کیلیے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں، بے روزگاری بڑھے گی ، چوری ،ڈکیتیاں اور دیگر جرائم عام ہوجائیں گے جو کرونا سے زیادہ خطرناک ہوںگے،شہر قائد پاکستان کا معاشی حب میں ایس او پیز کے ساتھ کاروبار کھولنے کی اجازت دینی چاہیے، کورونا سے احتیاط لازمی ہے، تاجر اپنی صفوں میں موجود منافع خوروں اور گراں فروشوں کو بھی نکال باہر کریں۔

لاہور:  ملک بھر میں 55 روز کی بندش کے بعد آج  سے 15اپ اور15ڈاون کی 30 ٹرینوں کی آمد و رفت شروع ہوجائے گی۔ تفصیلات کے مطابق ملک بھر میں 55روز کے بعد میں آج سے “ مسافر “ ریل گاڑیوں  کا آپریشن شروع ہوگا تاہم ریل گاڑیوں کی آمد و رفت کو محدود رکھا گیا ہے۔ ریلوے انتظامیہ کی جانب سے کرونا وائرس کے خدشات کے پیش نظر مسافر بوگیوں کے اندر جراثیم کش سپرے کیا گیا اور بوگیوں کی صفائی دھلائی بھی کی گئی۔

اس حوالے سے چیف کمرشل مینجر “ پسنجر “ ملک محمد فاروق نے کہا ہے کہ 60 فی صدٹرینوں میں اکوپنسی کے بعد بکنگ کا عمل بند کردیا جائے گا،ٹرینوں میں بکنگ صرف اورصرف آئن لائن کی جارہی ہے اور ریزرویشن دفاتر بند رہیں گے ۔ریلوے سٹیشن سے 200میٹر تک کے علاقے کو غیر ضروری افراد کیلئے بند کردیا جائے گا۔ مسافروں کو ٹرین کی روانگی سے ایک گھنٹہ پہلے اسٹیشن میں داخلہ کی اجازت ہوگی۔ مسافروں کے اہل خانہ کو انھیں اسٹیشن چھوڑنے کے لیے آنے کی اجازت نہیں ہوگی۔ اسٹیشن کی حدود میں صرف ٹکٹ رکھنے والوں ہی کو داخلے کی اجازت ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ ریلوے سٹیشنوں پر سینیٹائزر واک تھرو گیٹوں کی نصب کئے گے ہیں۔ ٹرین کے سٹاپ والے سٹیشنوں پر میڈیکل آفیسر اور سماجی فاصلے کو یقینی بنانے کیلئے سٹاف کی تعیناتی کر دی  گئی ہے اور دوران سفر تمام مسافروں کا ٹمپریچر چیک کیا جائے گا جبکہ مسافروں کو ماسک پہننے ، سینیٹائزر، دستانے اور صابن اپنے ہمراہ رکھنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

ٹرین آپریشن سے قبل ٹرینوں کی مکمل صفائی اور دھولائی اور ٹرینوں کے اندرجراثیم کش سپرے سمیت پلیٹ فارموں کی بھی صفائی کی گی۔ ریلوے انتظامیہ نے ریل سے سفر کرنے والے مسافروں کےلئے ایس او پیز متعارف کروادئیے ہیں، پہلی مرتبہ ایس او پیز کی خلاف ورزی پر 5سوروپے دوسری مرتبہ ایک ہزارروپے جرمانہ اور تیسری مرتبہ خلاف ورزی پر مسافر کو اگلے سٹاپ پر ٹرین سے اتار دیا جائے گا،ٹرینوں کے سٹاپ بھی مختصر کردئیے گے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ریلوے حکام کی جانب سے جزوی ٹرین آپریشن بحال کرنے پر ٹرینوں کے اوقات کار بھی تبدیل کردیے گئے ہیں اور اس کے ساتھ متعدد چھوٹے شہروں کے سٹاپ بھی ختم کئے گے ہیں جس سے ٹرینوں کے اوقات کار تبدیل کرنے سے سفر کا دورانیہ بھی کم ہوگیا ہے۔

ٹرین آپریشن کی جزوی بحالی کے بعد آج صبح پہلی ٹرین ساڑھے سات بجے ریل کار؛؛ سبک خرام ؛؛ راولپنڈی کےلئے پلیٹ فارم نمبر دو سے روانہ ہوگی۔ ٹرین آپریشن معطل ہونے سے قبل یہ ٹرین لاہور سے7 بجے چلتی تھی۔ دوسری ٹرین خیبرمیل ٹو ڈاون صبح ساڑھے8 بجے لاہور سٹیشن سے کراچی کےلئے پلیٹ فارم نمبر چار سے روانہ ہوگی یہ ٹرین پہلے 8بجے لاہور سٹیشن سے چلتی تھی،ٹرین آپریشن جزوی بحال ہونے پر ٹرینوں کے اوقات کار میں تبدیلی کے ساتھ سفر کا دورانیہ میں بھی کمی ہوگی۔

تیسری ٹرین علامہ اقبال ایکسپریس ٹرین دوپہر بارہ بجے کراچی کےلئے روانہ ہوگی،چوتھی ٹرین کراچی کےلئے براستہ فیصل آباد کراچی کےلئے روانہ ہوگی۔ پانچویں ٹرین بزنس ایکسپریس چار بجے براستہ ساہیوال کراچی کےلئے روانہ ہوگی۔ اسی طرح  جعفر ایکسپریس کوئٹہ کےلئے روانہ ہوگی اور شاہ حسین ایکسپریس شام7بجے براستہ فیصل آباد کراچی کےلئے روانہ ہوگی۔

 لاہور: (لائلپورپوسٹ) - سیکریٹری خوراک پنجاب سے کامیاب مذاکرات کے بعد فلور ملز ایسوسی ایشن پنجاب نے صوبے میں ہڑتال ختم کرنے کا اعلان کردیا۔ اس حوالے سے سیکریٹری خوراک وقاص محمود کا کہنا تھا کہ گندم کی بین الاضلاعی نقل و حمل پر پابندی ختم کردی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ آٹے کی قیمت کا تعین 28 مئی کو ہوگا، جبکہ کسی بھی فلور مل پر چھاپے نہیں مارے جائیں گے۔ وقاص محمود نے یہ بھی کہا کہ فلور ملز تین دن کے بجائے سات دن کا گندم اسٹاک رکھ سکیں گی۔ چیئرمین فلور ملز ایسوسی ایشن پنجاب عبدالرؤف مختار کا کہنا تھا کہ کل سے پنجاب میں فلور ملز کھل جائیں گی۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ  آٹے کی قیمت میں حالیہ اضافہ واپس لے لیا ہے جبکہ  28 مئی کو فلور ملز ایسوسی ایشن اور محکمہ خوراک آٹے کی نئی قیمت کا تعین کرے گا۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز پنجاب اور خیبرپختونخوا فلور ملز ایسوسی ایشن نے ہڑتال کے اعلانات کرتے ہوئے ملز بند کردی تھیں۔ تاہم اب فلورز ملز ایسوسی ایشن کی جانب سے کامیاب مذاکرات کے بعد ملز کھولنے کا اعلان کردیا گیا ہے تاہم خیبرپختونخوا سے ابھی تک ایسا کوئی اعلان سامنے نہیں آیا۔

خیال رہے کہ ہڑتال ختم کرنے کے لیے اس سے قبل بھی فلور ملز ایسوسی ایشن پنجاب اور سیکریٹری خوراک کے درمیان مذاکرات ہوئے تھے جو ناکام ہوگئے تھے۔

2020. All Rights Reserved. Layalpur Post Media House, Faisalabad Pakistan.

پاکستان میں ہفتے اور اتوار کو کاروبار بند رکھنے کا حکم کالعدم قرار – رویت ہلال ریسرچ کونسل نے عید الفطر25 مئی کو ہونے کی پیشگوئی کردی – افغان خفیہ ایجنسی کے دفتر پر طالبان کے حملے میں 7 اہلکار ہلاک اور 40 زخمی – عالمی بینک اور وزارت اقتصادی امور کے مابین دو منصوبوں کے لیے 37 کروڑ 10 لاکھ ڈالر کے معاہدے پر دستخط ہوگئے – عالمی ادارہ صحت کا کورونا سے نمٹنے کی قومی اور عالمی تیاریوں کا جائزہ لینے کیلئے آزادانہ تحقیقات کرانے کا عزم